Home / Islamic Stories / کیا تیرا شوہر ایک عام مسلمان نہ تھا؟

کیا تیرا شوہر ایک عام مسلمان نہ تھا؟

ایک شخص نے خواب میں حضرت عبداللہ بن مبارکؒ کے پڑوسی لوہار کو دیکھا کہ اسے بھی وہی درجہ مل گیا جو عبداللہ بن مبارکؒ کا تھا‘ وہ صبح بیدار ہوا تو بہت حیران ہوا‘ مارے تجسس کے اس سے کوئی کام ہی نہیں ہو رہا تھا‘ آخر کار اس سے رہا نہ گیا اور اس نے پردہ میں جا کر لوہار کی بیوی سے پوچھا ”کیا تیرا شوہر ایک عام مسلمان نہ تھا؟“۔ اس کی بیوی نے جواب دیا‘جی ہاں آپ درست فرما رہے ہیں وہ ایک عام مسلمان تھے‘ اس نے شخص پھر پوچھا‘ کیا آپ کے شوہر

آپ کے شوہر کوئی خاص عمل کرتے تھے‘ اس نے کافی دیر سوچنے کا بعد جواب دیا‘ جی ہاں وہ تھے تو ایک عام مسلمان مگر وہ دو خاص عمل کرتے تھے‘ ایک خاص عمل یہ تھا کہ لوہا کوٹتے ہوئے اگر ہتھوڑا ہوئے اگر ہتھوڑا اوپر اٹھا ہوتا تھا اور اذان کی آواز سنتے تھے تو ہتھوڑا وہیں نیچے پھینک دیتے اور نماز کےلئے اتنی سی بھی دیر گوارا نہیں کرتے تھے کہ لوہے کو ایک اٹھی ہوئی چوٹ ہی لگا دیں۔

دوسرا عمل یہ کہ رات کو بچوں کے ساتھ چھت پر سوتے اور آہ بھرتے تھے کہ اگر میں تھکا ہوا نہ ہوتا تو میں بھی عبداللہ بن مبارکؒ کی طرح عبادت کرتا‘ یہ حسرت اسے جنت میں حضرت عبداللہ بن مبارکؒ کے مقام تک پہنچا گئی۔ یہ حرف تمنا بڑی چیز ہے‘ نیکی کی حسرت رکھنا بھی بڑے کام کی چیز ہے۔ یہ بھی کیا کم ہے ہم تیری تمنا میں جئیں لطف منزل نہ سہی‘ خواہش منزل ہی سہی

About admin

Check Also

ماں کو گالیاں دینے والا شخص

1,817 ایک شخص کے بارے میں پتہ چلا کہ وہ ماں کو گالیاں دیتا ہے. …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *