Home / Islamic Stories / توں انسان پر کس وقت غالب آتا ہے حضرت موسیٰ کا شیطان سے سوال

توں انسان پر کس وقت غالب آتا ہے حضرت موسیٰ کا شیطان سے سوال

ایک روز شیطان حضرت موسیٰ علیہ السلام کے پاس آیا۔ آپ نے ا س سے دریافت فرمایا، بھلا یہ تو بتلا وہ کونسا کام ہے جس کے کرنے سے تو انسان پر غالب آ جاتا ہے۔ اس نے جواب دیا کہ جب آدمی اپنی ذات کو بہتر سمجھتا ہے اور اپنے عمل کو بہت کچھ خیال کرتا ہے اور اپنے گناہوں کو بھول جاتا ہے۔ اے موسیٰ! مَیں آپ کو تین ایسی باتیں بتاتا ہوں جن سے آپ کو ڈرتے رہنا چاہئے۔ ایک تو غیر محرم عورت کے ساتھ تنہائی میں نہ بیٹھنا، کیونکہ جب کوئی شخص تنہائی میں غیر

میں غیر محرم عورت کے ساتھ بیٹھا ہوتا ہے تو ان کے ساتھ تیسرا میں ہوتا ہوں۔

یہاں تک کہ اس عورت کے ساتھ اس کو فتنے میں ڈال دیتا ہوں۔ دوسرے اللہ تعالیٰ سے جو عہد کرو، اس کو پورا کیا کرو کیونکہ جب کوئی اللہ سے عہد کرات ہے تو اُس کا ہمراہی مَیں ہوتا ہوں یہاں تک کہ اس شخص اور وفاء عہد کے درمیان میں حائل ہو جاتا ہوں۔ تیسرے جو صدقہ نکالا کرو اُسے جاری کر دیا کرو کیونکہ جب کوئی صدقہ نکالتا ہے اور اُسے جاری نہیں کرتا تو میں اس صدقہ اور اس کے پورا کرنے کے بیچ میں حائل ہو جاتا ہوں۔ یہ کہہ کر شیطان چل دیا اور تین بار کہا، ہائے افسوس! مَیں نے اپنے راز کی باتیں موسیٰ سے کہہ دیں۔ اب وہ بنی آدم کو ڈرائے گا۔ (تلبیس ابلیس ص۳۹)

سبق:اپنی ذات کو بہتر سمجھنا، اسی بات سے شیطان خود ہلاک ہوا۔ کیونکہ اُس نے حضرت آدم علیہ السلام سے اپنے آپ کو بہتر سمجھا تھا۔ دین و مذہب تواضع و انکسار سکھاتاہے۔ لیکن دنیا فخر و انانیت سکھاتی ہے۔ یہی وجہ ہے کہ اہل دنیا اہل دین کو نظرِ حقارت سے دیکھتے اور ان پر پھبتیاں کستے ہیں اور اُن کی حرکت سے شیطان خوش ہوتا ہے کہ وہ اس جیسا کام کر رہے ہیں اپنے عمل کو بھی بہت زیادہ نہیں سمجھنا چاہئے۔ عمر بھر ایک ایک لمحہ بھی خدا کی یاد میں گزارہ جائے تو بھی کچھ نہیں اور خدا کے بے پایاں انعامات کے مقابلہ میں اس کی کوئی وقعت نہیں۔ ہر حال میں عمل کرو اور نظر خدا کے فضل و کرم پر رکھو اور عمل کر کے اپنے سے اوپر کے لوگوں کو دیکھو تا کہ عمل کر کے غرور پیدا نہ ہو۔ مثلاً اگر پانچ وقت کی نماز پڑھی ہے تو بزرگانِ دین کی طرف دیکھو جنہوں نے پانچ نمازوں کے علاوہ تہجد کی نمازیں اور دیگر نوافل بھی پڑھے ہیں۔ اس طرح اپنے عمل کا “بہت کچھ” ہونا نظر میں نہ رہے گا۔ کسی غیر محرم عورت کے ساتھ تنہائی میں بیٹھنا بہت خطرناک کام ہے۔ ایسی تنہائی میں شیطان ضرور پہنچتا ہے اور اپنا رنگ دکھاتا ہے۔ آج کل نئی تہذیب نے شیطان کا یہ کام بڑا ٓسان کر دیا ہے۔ خدا تعالیٰ سے ہمارا ہر عہد پورا ہونا چاہئے۔ اور شیطان کے بس میں آ کر اس مصرعہ پر عمل نہ کرنا چاہئے کہ:۔ وہ وعدہ ہی کیا جو وفا ہو گیا!۔

اور صدقہ و خیرات میں تاخیر ہر گز نہ کرنی چاہئے تا کہ شیطان کو رکاوٹ ڈالنے کا موقع نہ مل سکے۔ صدقہ و خیرا شیطان کے لئے ایسا ہے جیسے لکڑی کے لئے آرہ۔ لہٰذا شیطان کو جتنی جلدی ہو سکے اس آرہ کے نیچے لے آنا چاہئے

تفصیل کےلیے وڈیو دیکھیں اس وڈیو میں بہت ہی زبردست ڈزائینگ تیار کی گئی ہے۔ اتنا شئیر کریں کہ ہر مسلمان ہر یہ وڈیو پہنچ جائے۔ جزاک اللہ

About admin

Check Also

روضہ رسول ﷺ کی جالیاں چومنے وقت کیا معاملہ ہوا؟ ایمان افروز واقع

3,654 گلوکار ابرار الحق نے کہا ہے کہ کھوٹے سکے مدینے میں چلتے ہیں ، …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *