Home / Amazing and Interesting / اس قوم کو جھوٹ بولتے ہوے کبھی شرم نہیں آتی

اس قوم کو جھوٹ بولتے ہوے کبھی شرم نہیں آتی

تحریک لبیک کا سوشل میڈیا جھوٹ بولتے رنگے ہاتھوں پکڑا گیا – آج صبح ایک بچے کی ویڈیو وائرل ہوئی جس میں ایک کیلے بیچنے والے بچے کو لوٹا گیا ، تحریک لبیک نے جھوٹی ویڈیو بنائی جس میں ایک لڑکے نے کہا کہ وہ خود کیلے بانٹ رہا تھا ، لیکن بھلا ہو نیوز چینل کا جنہوں نے اصل بچہ ڈھونڈ نکلا جس سے ان کا جھوٹ بے نقاب ہو گیا

Fake Video

Real Video

اس میں کئی باتیں سوچنے والی ہیں۔

، اگر پہلی والی واقعی دھرنے والوں نے بنائی ہے، تو وہ بڑے بے وقوف ہیں کیونکہ آج کل کے دور میں ایسی حرکات چھپی نہیں رہتیں۔اور جھوٹ کا بھانڈا جلد ہی پھوٹ جاتا ہے۔ لہذا یہ حرکت الٹا خجالت کا باعث ہو گی۔
یہ بھی ہو سکتا ہے کہ کسی نے جان بوجھ کر ویڈیو بنائی ہو، تاکہ جب جھوٹ کا پتا چلے تو اور بھی ذیادہ بدنامی ہو۔(یہ ابھی ایک ٹرک ہے، جو اپنے دشمن کو بدنام کرنے کے لئے عام استعمال کی جاتی ہے)۔

تجزیہ

پہلی ویڈیو میں جو شخص بات کر رہا ہے، وہ ریڑھی لگا کے بیٹھا ہے، جبکہ جو ریڑی “لوٹی ” گئی وہ کھوتا ریڑھی تھی۔
اسی طرح نیوز جینل والی ویڈیو میں جو بچہ ہے اس نے وہی کپڑے پہنے ہیں، جو کھوتا بھگانے والے نے پہنے ہوئے ہیں۔

لیکن اس سب کے باوجود ایسا لگتا ہے کہ پہلی ویڈیو ہی صحیح ہے۔اور کیلے بطور لنگر ہی تقسیم کیئے گئے ہیں۔اور اس کی وجوہات مندر جہ ذیل ہیں۔​

پہلی ویڈیو میں کوئی بناوٹ نظر نہیں آتی، (اور اگر یہ لوگ سٹیج کر رہے تھے، تو انہیں ایکٹنگ کا ایوارڈ ملنا چاہئے)۔جبکہ ٹی وی والی ویڈیو میں بچہ رٹو توتے کی طرح بیان دے رہا تھا، جیسے اسے سکھلایا گیا ہو۔

میرا خیال ہے کہ یہ دونوں لڑکے اس وقوعے پر موجود تھے۔اگر آپ ویڈیو دوبارہ دیکھیں توریڑھی کے دائیں طرف جو لڑکا موجود ہے، وہ وہی پہلی ویڈیو والا لگتا ہے۔اور شروع کے چند سیکنڈوں میں وہ دو بچوں کو ایک ایک کیلا تقسیم بھی کرتا ہے۔اور جب حسب عادت “لٹ “مچتی ہے، تو وہ ایک شخص کا کان پکڑ کر واپس رکھواتا ہے۔ شاید وہ فی بندہ ایک ایک کیلا بانٹنا چاہتا تھا، لیکن ہجوم کنٹرول نہیں ہوا۔اور لٹ مچ گئی، جو کہ ایسے موقع پر مچتی ہی ہے۔
دوسری اہم بات یہ کہ جو لڑکا کھوتا بھگاتا ہے وہ تقریبا ہجوم سے دور چلا جاتا ہے، اور اگر چاہتا تو مزید آگے جا سکتا تھا، مگر وہ آگے جا کر رک جاتا ہے، اور اس کے بعد دو خواتین بھیلنگر سے اپنا حصہ وصول کرتیں ہیں۔
ْجس کا مال لٹ رہا ہو، اس کا ری ایکشن اس سے قطعا مختلف ہوتا ہے، جو بچے نے دیکھایا، ایسے موقع پر اور کچھ نہیں تو دہائی یا رونا پیٹنا تو ہر کوئی کرتا ہے۔ جو کہ بچے نے ہر گز نہیں کیا۔

اور سب سے آخری بات یہ کہ اگر یہ مال لوٹا بھی تھا، تو بھی اس سے دھرنے یا احتجاج کا کیا تعلق؟ لوٹنے والوں کی اکثریت لڑکے بالوں اور کم عمر بچوں کی تھی، اور جن میں خواتین بھی شامل ہیں۔ لہذا دھرنے وغیرہ کا اس سے کوئی تعلق نہیں۔ہاں اگر “لوٹنے والوں کی اکثریت ڈارھی دار ہوتی، یا سپیکر پر لوٹ مار کے اعلان ہو رہے ہوتے، تو یقینا دھرنے والے ذمہ دار ہوتے۔
دستیاب معلومات کے تحت یہ میرا تجزیہ ہے، جو کہ غلط بھی ہو سکتا ہے، ۔بہرحال اگر پہلی ویڈیو غلط ہے، اور بنائی بھی دھرنے کے شرکاء نے ہے، تو میں ان پر لوٹنے کے عمل سے ذیادہ لعنت کرتا ہوں،کہ جھوٹوں پر اللہ خود لعنت کرتا ہے، اور اگر ٹی وی والے جھوٹے ہیں، تو اندازہ کیا جا سکتا ہے، کہ میڈیا معاملے کو کیا سے کیا

About admin

Check Also

مسیح خاتون آسیہ ہے کون؟

2,018 سپریم کورٹ نے مسیحی خاتون آسیہ بی بی کو بری کردیا .فیصلہ چیف جسٹس …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *